کنسٹرکشن گائیڈ 3 گھر کی تعمیر کے لئے روڈمیپ وضع کرنا

کنسٹرکشن گائیڈ 3 گھر کی تعمیر کے لئے روڈمیپ وضع کرنا

نامناسب روڈمیپ کے بغیر کام شروع کرنا

کسی پلاننگ اور اور سمت کے تعین کے بغیر گھر کی تعمیر کا عمل شروع کرنا ایک تکلیف اور درد سر کا باعث بنتا ہے، کام شروع کرنے سے پہلے ایک روڈمیپ تیار کیا جائے جو آپ کو آپ کی منزل مقصود تک بغیر کسی مشکل کے پہنچائےگا ، یا کم از کم رسک فیکٹر کو کم کرےگا ، پیچیدگیاں بےشک آئیں گی ، کچھ گڑبڑ بھی ہوں گی ، لیکن اگر آپ نے روڈ میپ وضع کیا ہوگا تو آپ ہمیشہ اپنی مشکلات کو حل کرپائیں گے۔

جب آپ کے پاس ان تمام سوالات کے جوابات آجائیں جو ہم نے اپنے پرانے بلاگ ’’ کام شروع کرنے سے پہلے اچھی ریسرچ ناکرنا ‘‘ میں ذکرکئے تھے ، تو سمجھ چائے کہ آپ نے روڈ میپ وضع کرنے کا پہلے قدم اٹھا لیا ہے ، دوسرا اقدام آپ کا مالی وسائل جمع کرنا ہوگا تاکہ آپ کنسٹرکشن کے دوران مالی دشواریوں کی وجہ سے پھنس نا جائیں ، کام شروع کرنے سے پہلے اپنے بجٹ کی زیادہ سے زیادہ اور کم سے کم کی حد کا تعین کرلینا ایک عقلمندانہ فیصلہ ہوگا۔

آپ کا تیسرا قدم یہ ہوگا کہ آپ فیصلہ کریں کہ گھر کی تعمیر آپ خود کرنا چاہیں گے یا پھر ٹرنکی کانڑیکٹ کے تحت کسی کنسٹرکشن کمپنی سے بنوائیں گے . ناتجربہ کار شخص کے لیے خود سے گھر کی تعمیر کرنا/کروانا بڑا مشکل کام ہے، دوسرے لفظوں میں اسے جہنم کی سختی اٹھانا بھی کہہ سکتے ہیں ، اس کام میں بذات خود پڑنے سے پہلے آپ کے پاس کم از کم کچھ ٹیکنیکل نالج ہونی چاھئے ۔ چلیں ہم فرض کرلیتے ہیں کہ آپ خود اپنے گھر کی تعمیر کرنا چاہتے ہیں ، تو اس میں دو ممکنہ سیناریو ہو سکتے ہیں ، یا تو آپ پراجیکٹ بغیر کسی پریشانی اور مالی نقصان کئے ہوئے مکمل کرلیں گے ، جس سے آپ اپنا قیمتی وقت کنسٹرکشن کو دے کر پیسے بھی بچالیں گے ، یا پھر آپ اپنا من پسند نتیجہ حاصل کرنے میں ناکام رہیں گے ، لاگت بھی اس سے کہیں زیادہ لگ چکی ہوگی جو کنسٹرکشن کمپنی نے آپ کو بتائی ہوگی ، وقت اور اینرجی کا ضیاع بھی ہوگا ۔ اگر آپ کے پاس کنسٹرکشن کی مناسب نالج اور تجربہ کار لیبر کی جانکاری نا ہوئی تو زیادہ امکان یہی ہے کہ آپ کو دوسرا سیناریو ہی پیش آئےگا۔

اگر آپ کسی کنسٹرکشن کمپنی سے ٹرنکی سرویسیز کے تحت کام لینا چاہتے ہیں تو آپ کو پورے پراجیکٹ کی تکمیل تک کسی دشواری کا سامنا نہیں ہوگا ، بس اس چیز کا خیال رہے کہ جس بلڈر سے آپ معاہدہ کررہے ہیں انکی پرافیشنل تاریخ موجود ہو۔ ٹرنکی اس پراجیکٹ کو کہتے ہیں جس میں بلڈر پورے پراجیکٹ کو پائے تکمیل تک پہنچانے کا ذمہ دار ہوتا ہے ، تمام قسم کے کام جیسے لیبر اور میٹیرئل کی حصولی ، سائٹ کی سوپرویژن اور کیش ہینڈلنگ وغیرہ بلڈر کی ذمہ داری ہوتی ہے ، کلائنٹ کے ذمہ صرف بر وقت ادائگیوں کو یقینی بنانا ہوتا ہے ، چنانچہ جب پراجیکٹ مکمل ہوجائے تو بلڈر ایک مکمل تیار گھر کی چابیاں کلائنٹ کے حوالے کرتا ہے۔

ٹرنکی پراجیکٹ کی دو مندرجہ ذیل اقسام ہیں :

ٹرنکی صرف گرے سٹرکچر تک :

کلائنٹ اور بلڈر کے درمیان معاہدہ طے پاتا ہے کہ پراجیکٹ گرے سٹرکچر کے مکمل ہونے پر پائے تکمیل تک پہنچ جائےگا ، جس میں سارا سٹرکچرل ورک شامل ہوتا ہے ، کھدائی سے لے کر سلیب ڈالنے تک ، اندرونی اور خارجی پلاسٹرنگ ، اندر اور باہر کی فلورنگ صرف پی سی سی  ( پلین سیمنٹ کنکریٹ ) ، بجلی اور سینیٹری کی مکمل فٹنگ ، چھتوں کی واٹر پروفنگ ۔ اس قسم کا کانٹریکٹ انتہائی تجویز کردہ ہے کیونکہ گرے سٹرکچر کا سارا کام تکنیکی ہوتا ہے ۔ آپ کو ورکنگ اور سٹرکچرل ڈرائنگز سمجھنی پڑیں گی اگر آپ اپنے گھر کا سٹرکچر مکمل کرنا چاہتے ہیں اور یہ بہت پیچیدہ کام ہوگا اگر آپ اس کام سے انجان ہیں ۔

ٹرنکی مکمل فینیشنگ کے ساتھ :

کلائنٹ اور بلڈر کے درمیاں معاہدہ طے پاتا ہے کے پراجیکٹ گھر کی مکمل فینیشنگ کرکے پائے تکمیل تک پہنچے گا ، اس قسم کا پراجیکٹ کافی پیچیدہ ہوجاتا ہے اگر مناسب معاہدے نا لکھے جن میں مکمل میٹیرئیل کی تفصیلات نا بیان کی جائیں خصوصا فینیشنگ آئیٹمز کی تفصیلات ۔ گھر کی فینیشنگ میں گرے سٹرکچر سے زیادہ اشیاء کا استعمال ہوتا ہے ، مزید یہ کہ فینیشنگ کے آئیٹمز خود مالک مکان اپنی پسند کے سیلیکٹ کرتا ہے ، لہذا یہ کام بلڈر کے لئے تھوڑا مشکل ہو سکتا ہے ۔

اگر آپ اپنے گھر کی تعمیر کے لیے ٹرنکی گرے سٹرکچر کا کانٹریکٹ کرلیتے ہیں اور جب گرے سٹرکچر مکمل ہوجاتا ہے تو آپ اپنے گھر کی فینیشنگ دوسرے مرحلے میں بلڈر کے ساتھ  ایک نیا معاہدہ کرکے بھی کروا سکتے ہیں ، جسے سپرویژن کانٹریکٹ کہا جاتا ہے ۔ اس قسم کے کانٹریکٹ میں بلڈر فینیشنگ  کے دوران لیبراور میٹیرئیل کی حصولی کے حوالے سے مالک /مالکن کے مکمل مشورے اور رہنمائی کے ساتھ مدد کرتا ہے۔ مالک /مالکن تمام قسم کی ادائیگیاں وقتا فوقتا خود اداء کرتا رہےگا ۔ تجربہ کار لیبر اور سوپروائیزنگ بلڈر کی ذمہ داری ہوگی لیکن لیبر کے ساتھ مالی معاہدے بلڈر اور مالک کی باہمی مشاورت سے طے پائیں گے ۔ سوپرویژن کانٹریکٹ میں بلڈر عموما اپنی خدمات کے عوض مکمل لاگت کی کچھ فیصد قیمت وصول کرتا ہے۔ بہرحال اگر آپ گھر کی تعمیر کا کام خود مکمل کرنے کا فیصلہ کرلیں تو آپ کو ہر قسم کی سختی برداشت کرنے کے لئے تیار ہوجانا چاہئے ، اور پھر آپ کا پہلا فیصلہ یہی ہونا چاہئے کہ کسی اچھے آرکیٹکٹ کی خدمات حاصل کریں جو آپ کے گھر کی ڈرائنگ تیارکرے ، اگلے بلاگ میں ان شاء اللہ اسی موضوع پر بات ہوگی۔

About The Author

Mamoon Hanif
Content writer and a blogger. Passionate in research and analysis on various issues. Keen observer of current affairs and politics.

No Comments

Leave a Reply

CLOSE
CLOSE
%d bloggers like this: